پنجاب یونیورسٹی کے شعبہ ابلاغیات کے بانی پروفیسرڈاکٹر مغیث الدین شیخ جاں بحق ہوگئے

صحت و تندرستی

پنجاب یونیورسٹی کے شعبہ ابلاغیات کے بانی پروفیسرڈاکٹر مغیث الدین شیخ جاں …

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان بھرمیں کورونا وائرس کے خونیں وار جاری ہیں جس میں اب تک 3 ہزار سے زائد افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں۔

کورونا وائرس کا شکار ہونےو الوں میں پنجاب یونیورسٹی کے شعبہ ابلاغیات کےبانی اور معروف پروفیسر ڈاکٹر مغیث الدین شیخ بھی شامل ہوگئے ہیں۔

ان کے صاحبزادے علی مغیث نے برطانوی نشریاتی ادارے کو اپنے والد کے انتقال کی تصدیق کردی ہے۔

پروفیسر ڈاکٹر مغیث الدین شیخ پنجاب یونیورسٹی کے شعبہ ابلاغیات کے بانی ہیں انہوں نے وہاں  بطور ڈین  کام کیا اور دیگر کئی اداروں میں بھی تدریسی خدمات سرانجام دیں۔

20 جون کو انھوں نے اپنی فیس بک پوسٹ کے ذریعے اعلان کیا تھا کہ ان میں گذشتہ ہفتے کورونا وائرس کی تشخیص ہوئی تھی جس کے بعد انھوں نے خود کو گھر پر ہی محدود کر لیا تھا۔انھوں نے لکھا کہ آغاز میں گھر پر محدود رہنے کے بعد اب وہ ہسپتال متنقل ہو گئے ہیں۔

گزشتہ روز علی مغیث نے فیس بک کے ذریعے بتایا تھا کہ ان کے والد کو وینٹی لیٹر پر منتقل کر دیا گیا ہے۔

ان کے انتقال پر سیاسی و سماجی حلقوں اور ان کے شاگردوں کی جانب سے اظہارافسوس کیا جارہاہے

گزشتہ برس ان کی سوانح عمری ’سسکتی مسکراتی زندگی‘ بھی شائع ہوئی تھی۔

مزید :

علاقائیپنجابلاہورکورونا وائرس




Source link

اسی بارے میں مزید خبریں

Menu