برطانیہ میں دوران ڈرائیونگ موبائل فون کے استعمال کیخلاف قوانین مزید سخت کرنے کی تیاریاں


برطانیہ میں دوران ڈرائیونگ موبائل فون کے استعمال کیخلاف قوانین مزید سخت … لندن(مجتبیٰ علی شاہ )برطانیہ میں آئندہ برس سے دوران ڈرائیونگ موبائل فون اٹھانے اور استعمال کرنے کے حوالے سے قوانین کو مزید سخت کردیا جائے گا جس کے بعد ڈرائیورز جن بہانوں اورتاویلات کو استعمال کرکے سزا سے بچ جاتے ہیں وہ ایسا نہیں کرسکیں گے۔ ڈپارٹمنٹ فار ٹرانسپورٹ کے مطابق ڈرائیورز، ہینڈز فری استعمال کرسکیں گے جب کہ ڈرائیو تھرو پر موبائل فون کے ذریعے ادائیگی بھی ممکن ہوگی، موجودہ قوانین کے مطابق ڈرائیورز دوران ڈرائیونگ فون کال نہیں کرسکتے اور ٹیکسٹ پیغام بھی نہیں بھیج سکتے، لیکن جب ڈرائیور موبائل ہاتھ میں لیے پکڑے جاتے ہیں تو وہ یہ کہہ کر سزا سے بچ جاتے ہیں کہ وہ تو موبائل سے تصویر بنا رہے تھے یا گیم کھیل رہے تھے۔ روڈ منسٹر بیرونس میری نے کہا ہے کہ ڈرائیونگ کرتے ہوئے موبائل فون پر بات کرنا انتہائی خطرناک ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ یہاں کی سڑکوں کا شمار دنیا کی محفوظ ترین سڑکوں میں ہوتا ہے اور ہمیں اپنے قوانین کو بھی نئی صدی کے تقاضوں سے ہم آہنگ کرنے کی ضرورت ہے جس کے لیے اس حوالے سے قوانین کو مزید سخت کیا جارہا ہے۔ برطانیہ میں ڈرائیورز کے موبائل فون پر مصروف ہونے کے سبب2019ء میں ٹریفک کے حادثات میں637افراد شکار ہوئے، جن میں سے18ہلاک ہوگئے اور135شدید زخمی ہوئے۔ اس وقت ڈرائیونگ کرتے ہوئے موبائل کے استعمال پر200پائونڈ، 6پنالٹی پوائنٹس جرمانہ ہے۔ یونیورسٹی آف لیڈز کی ایک ریسرچ کے مطابق765کاروں میں سے52کے ڈرائیور موبائل کا استعمال کرتے ہیں اور جب30میل فی گھنٹہ کی رفتار سے چل رہی ہوتی ہے وہ100فٹ کا فاصلہ2.3سیکنڈ میں طے کرتی ہے اور پلے لسٹ پر گانا تبدیل کرتے یا کوئی ایپ چیک کرنے کے مختصر سے وقت جب آنکھ سڑک پر نہ ہو تو وہ بھی کتنے خطرناک حادثہ کا سبب ہوسکتا ہے

مزید :

برطانیہ –


Source link

مینو